Home Blog Page 2

Mohsin Naqvi 2 Lines Poetry in Urdu

0
mohsin naqvi 2 lines poetry in urdu

mohsin naqvi 2 lines poetry in urdu

Mohsin Naqvi 2 Lines Poetry in Urdu available on this post, we listed mohsin naqvi sad poetry 2 lines with images, you will get all types of 2 line shayari related to mohsin naqvi.


This post is designed only for mohsin naqvi fans, who are searching mohsin naqvi two line shayari form long time, we try to give all kind of 2 line shayari related to mohsin naqvi under one roof, everyone like to read and share mohsin naqvi poetry on social media, if you want to read or want to use mohsin naqvi shayari on your whatsapp, facebook status then this post best for you.

We give you Mohsin Naqvi 2 line poetry in different types, you can read it as Urdu, Roman Urdu or use images, it is up to you what is your purpose, as you know, all the poetry of Mohsin Naqvi is the best but we have selected only the best mohsin naqvi sad poetry 2 lines and love poetry.

Before read Mohsin Naqvi 2 Lines Poetry in Urdu i would like to inform you if you see any mistake or you can’t read fonts, you can contact us or write in the comment box.
 

Mohsin Naqvi 2 Lines Poetry in Urdu

ہم نے گہرے دریاؤں سے سیکھا ہے
آپ اپنی ہی موج میں بہنا، چپ رہنا

 وہ بھی کیا دن تھے کے پل میں کر دیا کرتے تھے ہم
عمر بھر کی چاہتیں، ہر ایک ہرجائی کے نام
ہر گھڑی رائیگاں گزرتی ہے
زندگی اب کہاں گزرتی ہے
اس کے میرے فاصلے محسن نہ پوچھ
رنگ سے خوشبو جدا ہے اور بس
کس کو چاہیں، کس کو بھلا دیں
دوستی میں ہے انتخاب عذاب
ہم سے مت پوچھ کب رتیں بدلیں
ہم رہے اسکے انتظار میں گم
آنکھ نم بھی کرو تو بس اتنی
رنگ پھیکے پڑیں نہ منظر کے
بھلے لگتے ہیں طوفان سے لڑتے بادل مجھکو
ہوا کے رخ پہ چلتی کشتیاں اچھی نہیں لگتیں
کھلی زمینوں میں جب بھی سرسوں کے پھول مہکیں
تم ایسی رت میں سدا میرا انتظار کرنا

Mohsin Naqvi 2 Line Poetry

جانے اب کس دیس ملیں گے اونچی ذاتوں والے لوگ
نیک نگاہوں، سچے جذبوں کی سوغاتوں والے لوگ
صرف ہاتھوں کو نہ دیکھو کبھی آنکھیں بھی پڑھو
کچھ سوالی بڑے خود دار ہوا کرتے ہیں
ہر وقت کا ہنسنا تجھے برباد نہ کر دے
تنہائی کے لمحوں میں کبھی رو بھی لیا کر
اسے گنوا کے میں زندہ ہوں اس طرح محسن
کہ جیسے تیز ہوا میں چراغ جلتا ہے
دل کی خاطر زندہ رہیے کب تلک؟
دل ہی کہتا ہے ک اب مر جائیے
بچھڑ چلا ہے تو میری دعا بھی لیتا جا
وہاں وہاں مجھے پائے، جہاں جہاں جائے
ایک قیامت کی خراشین تیرے سَر پہ سجائیں
ایک محشر میرے اندر سے اٹھا تیرے بعد
یہاں مزدور کو مرنے کی جلدی کچھ یوں بھی ہے محسن
کہہ زندگی کی کشمکش میں کفن مہنگا نا ہو جائے
کس لیے محسن کسی بے مہر کو اپنا کہوں
دِل كے شیشے کو کسی پتھر سے کیوں ٹکراوں میں
عکس و آئینہ میں اب ربط ہو کیا تیرے بعد
ہَم تو پھرتی ہیں خود اپنے سے خفا تیرے بعد

 Mohsin Naqvi Sad Poetry 2 Lines

وہ آج بھی صدیوں کی مسافت پہ کھڑا ہے
ڈھونڈا تھا جسے وقت کی دیوار گرا کر
ہَم دونوں کا دکھ تھا ایک جیسا
احساس لیکن جدا جدا تھا
شمار اس کی سخاوت کا کیا کریں كے وہ شخص
چراغ بانٹتا پھرتا ہے چھین کر آنکھیں
جس کو طوفان سے اُلجھنے کی عادت ہو محسن
ایسی کشتی کو سمندر بھی دعا دیتا ہے
آتا ہے کون کون میرے غم کو بانٹنے
محسن تو میری موت کی افواہ اڑا كے دیکھ
ہَم سے بیوفائی کی انتہا کیا پوچھتے ہو محسن
وہ ہَم سے پیار سیکھتا رہا کسی اور كے لیے
کون کہتا ہے نفرتوں میں درد ہے محسن
کچھ محبتیں بھی بڑی ازایت ناک ہوتی ہیں
اِس شب كے مقدر میں سحر ہی نہیں محسن
دیکھا ہے کئی بار چراغوں کو بُجھا کر
کہاں ملے گی مثال میری ستم گری کی
کہہ میں گلابوں كے زخم کانٹوں سے سی رہا ہوں

Mohsin Naqvi Two Line Shayari

میں تیرے ملنے کو معجزہ کہہ رہا تھا لیکن
تیرے بچھڑنے کا سانحہ بھی کمال گزرا
اب تو بس جان ہی دینے كی باری ہے محسن
میں کہاں تک ثبات کروں كے وفا ہے مجھ میں 
وہ کیا گیا كے رونق درو دیوار گئی محسن
ایک شخص لے گیا میری دنیا سمیٹ کر
ذکر شب فراق سے وحشت اسے بھی تھی
میری طرح کسی سے محبت اسے بھی تھی
عمر ساری تو بہت دور کی بات ہے محسن
اک لمحے كے لیے کاش وہ میرا ہوتا 
 اک بار اور دیکھ کر آزاد کر دے مجھے محسن
کہ میں آج بھی تیری پہلی نظر کی قید میں ہوں
اب تک میری یادوں سے مٹائے نہیں مٹتا
بھیگی ہوئی اک شام کا منظر تیری آنکھیں
محسن میں بات بات پہ کہتا تھا جس کو جان
وہ شخص آج مجھ کو بے جان کر گیا 
ہَم تو ہنستے ہیں دوسروں کو ہنسانے کی خطر محسن
ورنہ دِل پہ زخم اتنے ہیں كے رویا بھی نہیں جاتا
تمھیں جب روبرو دیکھا کریں گے
یہ سوچا ہے بہت سوچا کریں گے

Mohsin Shayari Two Line

اسے پانا اسے کھونا اسی كے ہجر میں رونا
یہی گر عشق ہے محسن تو ہَم تنہا ہی اچھے تھے
وہ اکثر دن میں بچوں کو سلا دیتی ہے اِس دَر سے
گلی میں پِھر کھلونے بیچنی والا نا آ جائے
اس نے یہ سوچ کر ہمیں الوداع کہہ دیا محسن
یہ غریب لوگ ہیں محبت كے سوا کیا دے گے
ہَم اپنی دھرتی سے اپنی ہر سمٹ خود تلا شیں
ہماری خاطر کوئی ستارہ نہیں چلے گا
آج کی رات بھی ممکن ہے نا سو سکوں محسن
یاد پِھر آئی ہے نیندوں کو اڑانے والی
ازل سے قیام ہیں دونوں اپنی ضدوں پہ محسن
چلے گا پانی مگر کنارہ نہیں چلے گا
چل پڑا ہوں میں زمانے كے اصولوں پہ محسن
میں اب اپنی ہی باتوں سے مکر جاتا ہوں
سیاہ رات میں جلتے ہیں جگنو کی طرح
دلوں كے زخم بھی محسن کمال ہوتے ہیں
ہمیں تو کب سے پتہ ہے کے تو بے وفا ہے محسن
تجھے چاہا اِس لیے شاید تیری فطرت بَدَل جائے

Conclusion Mohsin Naqvi 2 Lines Poetry in Urdu

Now end of this Mohsin Naqvi 2 Lines Poetry in Urdu post you have lot of numbers of mohsin naqvi 2 line poetry, if you have poetry related to mohsin shayari two line you can submit thru our submit form, if you like our mohsin naqvi sad poetry 2 lines, mohsin naqvi 2 line shayari please share it with your friends and family, Don’t forget to share it on social media so more poetry lovers can visit this mohsin naqvi 2 line poetry post.
Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %

Wo 5 Maqamat Jaha Soraj Ghuroob Nahi Hota

0
Wo-5-Maqamat-Jaha-Soraj-Ghuroob-Nahi-Hota.png

Wo 5 Maqamat Jaha Soraj Ghuroob Nahi Hota

Wo-5-Maqamat-Jaha-Soraj-Ghuroob-Nahi-Hota.png

آج ہم آپ کو ان مقامات کا بتایں گے جہاں سورج کبھی غروب ہی نہیں ہوتا دنیا میں چند مقامات ایسے ہیں، جہاں سورج کبھی غروب ہی نہیں ہوتا تو آئیے آج آپ کو ان مقامات کی سیر کرواتے ہیں
 
 دنیا کے وہ پانچ مقامات جہاں سورج کبھی غروب ہی نہیں ہوتا یہ دنیا اللہ پاک نے بہت خوبصورت بنائی ہے اور ایسے مقامات کی تخلیق کی ہے جنہیں دیکھ کر انسان دنگ رہ جاتا ہے آپ کو ان پانچ مقامات کے بارے میں بتاتے ہیں جہاں سورج کبھی غروب ہی نہیں ہوتا اور اگر ہوتا بھی ہے تو اتنے مختصر وقت کے لئے کہ ہمیں یقین ہی نہیں آئے گا کہ کبھی سورج غروب ہوا ہے
 
 پہلے نمبر پر آتا ہے ناروے یورپ کے شمال میں واقع یہ خوبصورت ملک ان چند مالک میں سے ایک جہاں آپ کو دنیا کی ہر سہولت بھی میسر ہے اور ساتھ ہی حکومت کی جانب سے شہریوں کو سوشل سیکورٹی کی حفاظت بھی حاصل ہے لیکن اس کے ساتھ ہی قدرت نے ناروے کو یہ اعزاز بھی دیا ہے کہ یہاں سورج صرف چند گھنٹے کے لئے غائب ہوتا ہے
 
مئی سے جولائی تک کچھ علاقے شمالی ناروے ایسے بھی ہیں جہاں سورج رات کو بھی آب و تاب سے چمکتا ہے یہی وجہ ہے کہ ناروے کو آدھی رات کے سورج کی سرزمین بھی کہا جاتا ہے،
 
دوسرے نمبر پرہے آئس لینڈ شمالی بحر اوقیانوس میں واقع یہ بہت بڑا جزیرہ ہے یہاں آپ کو خوبصورت اور دلفریب مناظر آبشاریں اور جنگلات دیکھنے کو ملیں گے یہاں بھی سورج کم ہی غروب ہوتا ہے،
 
تیسرے نمبر پر ہے کینیڈا، کینیڈا کے شمال میں کئی علاقے ایسے ہیں جہاں دن کی لمبائی 22 گھنٹے تک بھی ہوتی ہے اس وقت سے مقامی لوگ لطف اندوز ہونے کے لیے مختلف سرگرمیاں کرتے ہیں جن میں گولف کھیلنا پہاڑوں پر چڑھنا اور مچھلی پکڑنا شامل ہیں،
 
سویڈن ، ناروے کا ہمسایہ ملک سویڈن بھی ان علاقوں میں شامل ہے جہاں سورج غروب نہیں ہوتا سویڈن کے دارالحکومت سٹاک ہوم میں سورج کے تقریبا رات ایک بجے غروب ہونے کے بعد صرف تین گھنٹے بعد یعنی چار بجے دوبارہ نکل آتا ہے،
 
اس طرح فن لینڈ ملک بھی اس فہرست میں شامل ہیں ہے جہاں سورج غروب نہیں ہوتا یہاں لوگ موسم سے لطف اندوز ہونے کے لئے سکینگ، سائیکلنگ اور پہاڑوں پر چڑھتے ہیں
Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %

Funny Jokes About Friends in Urdu 2022

0
funny-jokes-about-friends-in-urdu.png

funny-jokes-about-friends-in-urdu.png

Agar to app funny jokes about friends in Urdu ko dond rahy ha to ya page app ka liya ha, yaha per app ko bohat mazay kay dosto ka mutaliq latifay (Jokes) milay gay.

Jasy hum dosto ka saath apnay ghum share kartay or un sa bohat pyar kartay ha asy he dil cahta ha un ka sath kabhi jokes ko be share kiya jay or apni zindagi ka in lamhaat ko yaadgar banya jay. in lamhat ko yaadgar bananya ka liya hum app ko kuch achay friends jokes ki list daty ha.

List of Funny Jokes About Friends in Urdu

 
funny-jokes-about-friends-in-urdu-01

 

funny-jokes-about-friends-in-urdu-02

funny-jokes-about-friends-in-urdu-03
funny-jokes-about-friends-in-urdu-04

funny-jokes-about-friends-in-urdu-05

May You Also Like – Mian Biwi Jokes in Urdu

 

funny-jokes-about-friends-in-urdu-06

funny-jokes-about-friends-in-urdu-07
funny-jokes-about-friends-in-urdu-08
funny-jokes-about-friends-in-urdu-09
funny-jokes-about-friends-in-urdu-10

Funny Jokes on Friends in Urdu 2022

funny-jokes-about-friends-in-urdu-11
funny-jokes-about-friends-in-urdu-12
funny-jokes-about-friends-in-urdu-13
funny-jokes-about-friends-in-urdu-14
funny-jokes-about-friends-in-urdu-15

May You Also Like – Eid Jokes in Urdu

funny-jokes-about-friends-in-urdu-16

funny-jokes-about-friends-in-urdu-17
funny-jokes-about-friends-in-urdu-18
funny-jokes-about-friends-in-urdu-19
funny-jokes-about-friends-in-urdu-20

Conclusion of Funny Jokes About Friends in Urdu 2022

Hum umeed kartay ha app ko hamari funny jokes about friends in Urdu ki collections passand ayi ho ge. is website ko visit kartay rahy kio ka hum har haftay is page ko update kartay ha.
Agar app ko ya post passand ai ha to please apnay dosto ka saath share kar or social media be share kary. app hamay social media pay be follow kar saktay ha
Once again, thanks for visiting the Funny Jokes on Friends in Urdu post.
 

Happy
Happy
100 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %

The History of the Sandwich in Urdu

0

The History of the Sandwich in Urdu

سینڈوچ کی دلچسپ کہانی

دوستوں بات کرتے ہے سینڈوچ کی کہانی کی یہ کہانی انتہائی عجیب ہے سینڈوچ ایجاد کرنے کا سہرا جان مونٹیگو نامی آدمی کے سر جاتا ہے۔

 یہ انگلینڈ میں رہتا تھا یہ آدمی جواری تھا یعنی جوئے کی لت لگی ہوئی تھی یہ کافی امیر تھا اور ہروقت کیسینوں میں پایا جاتا تھا۔

1762 میں ایک دن کیسینو میں بیٹھا ہوا تھا یہ جوئے میں اتنا مصروف تھا کہ آس کے پاس کھانا کھانے کا بھی ٹائم نہیں تھا۔

اس نے اپنے باورچی کو کہا کہ اس کو کوئی ایسی چیز بنا کر دے جس سے اسے کھانے میں ٹائم نہ لگے اور اس کے باورچی نے اسے دو ٹوسٹ کے بیچ میں میٹ کا ایک سلائس ڈال کر دے دیا جان کو یہ آئیڈیا کافی پسند آیا اور یہیں سے سینڈوچ کی شروعات ہوئی تھی جو آج ہم سب کھاتے ہیں۔

May You Also Like – The History of Ketchup in Urdu کیچپ کی دلچسپ کہانی

Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %

The History of Biryani in Urdu

0
The-History-of-Biryani-in-Urdu

The-History-of-Biryani-in-Urdu

The History of Biryani in Urdu

بریانی کی دلچسپ کہانی

دوستوں بریانی ہم سب کے گھروں میں بنتی ہے اور شائد ہی کوئی ایسا ہوجس کو بریانی کھانا پسند نہ ہو کہتے ہے بریانی کو ایران میں ایجاد کیا گیا تھا بریانی لفظ ایک فارسی زبان سے لیا گیا ہے جس کا مطلب فرائیڈ بفور کوکنگ ہوتا ہے۔

لیکن جو بریانی ہم آج کھاتے ہیں اس کو ہندوستان میں مغل دور میں بنایا گیا تھا یہ کہانی بتائی جاتی ہے کہ شاہ جہاں کی مشہور ملکہ ممتاز جس کی یاد میں شاہ جہاں نے تاج محل بنایا تھا ایک دفعہ اپنے فوجیوں سے ملنے گئی یہ فوجی بہت کمزور لگ رہے تھے۔

تب ہی ممتاز نے اپنے شاہی باورچی کو چاول کی ایک ایسی ڈش بنانے کا کہا جس سے فوجوں میں طاقت آئے اور اس کے باورچی نے بریانی بناء ڈالی جو ہم آج  کل کھاتے ہیں مغل دور میں بریانی ایک روئیل ڈش تھی یعنی یہ شاہی پکوان تھا اور اس کو شہزادوں اور شہزادیوں کے لئے بنایا جاتا تھا اور یہیں سے بریانی پورے ہندوستان میں مشہور ہو گئی۔

Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %

The History of Pizza in Urdu

0
The-History-of-Pizza-in-Urdu

The-History-of-Pizza-in-Urdu

The History of Pizza in Urdu

پیزا کیسے ایجاد ہوا ؟

بات کرتے ہیں ہم سب کا فیورٹ پیزا Pizza کیسے ایجاد ہوا اس کی کہانی بھی کافی دلچسپ ہے پیزا Pizza کی شروعات اٹلی Italy کے شہر نیپلزNaples سے بتائی جاتی ہے۔

1830 میں اسی شہر میں دنیا کا پہلا پیزا Pizza ہوٹل کھلا تھا جس کا نام انٹیکا پزیریا پورٹ البہ ANTI CA PIZZERIA PORT’ALBA تھا۔

اس دوران اٹلی Italy کی گلیوں میں ہر جگہ پرپیزا Pizza فروخت ہونا شروع ہو چکا تھا لیکن ماڈرن پیزا Modern Pizza جو ہم آج کھاتے ہیں اس کی کہانی تھوڑی مختلف ہے۔

May You Also Like – History of the hamburger برگر کی دلچسپ کہانی

اس کی کہانی بھی اٹلی Italy کے شہر نیپلزNaples میں ملتی ہے 1889 میں اس شہر میں ایک شیف رہتا تھا اس کو کہا گیا کہ اٹلی کی ملکہ مارگریٹا نیپلزNaples آرہی ہے اور یہ اس کے لئے پیزا Pizza بنائیے۔

اس شخص نے اٹلی Italy کے جھنڈے کو ذہن میں رکھ کر ایک بیڈ پر ٹماٹر چیز اور تلسی کے پتے رکھے اور اس کو بیک کر دیا اس شخص نے اس پیزا Pizza کا نام ملکہ کے نام پر رکھا۔

یعنی پیزا مارگریٹا ملکہ کو یہ پیزا Pizza بہت پسند آیا اور ماڈل پیزا دراصل یہی سے شروع ہوا تھا۔

Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %

The History of Ketchup in Urdu | Interesting Story

0
ketchup History
ketchup History

The History of Ketchup in Urdu

کیچپ کی دلچسپ کہانی

بات کرتے ہیں کیچپ Ketchup کی شاید ہی کوئی ایسا انسان ہو جس نے کبھی کیچپ  Ketchup نہ کھائی ہو کیچپ دراصل چائنہ سے شروع ہوئی تھی۔

چائنہ میں ایک مچھلی تھی جس کا نام کٹرییا باسا تھا اسی مچھلی کی ایک چٹنی بنتی تھی جو آگے چل کر کٹرییا سے کیچپ Ketchup بن گئی۔

پھر 1812 میں ایک سائنسدان جیمس میاس James Mease نے دنیا کی پہلی ٹومیٹو کیچپ Tomato Ketchup بنائی تھی اس کی ریسیپی میں صرف ٹماٹر اورمرچ ہوتی تھی یہ لوگوں کو کافی پسند آئی کیونکہ اس کیچپ Ketchup کو ایک سال تک بوتل میں رکھ کر استعمال کیا جا سکتا تھا۔

لیکن جو کیچپ Ketchup ہم آج کھاتے ہیں اس کی ریسیپی بنانے کا کریڈٹ ایک امیریکن آدمی ہنری جے ہینز Henry J. Heinz کے سر جاتا ہے اس نے کیچپ Ketchup میں ورجینیا سرکہ Virginia vinegar کو شامل کیا تھا تاکہ یہ خراب نہ ہو ہنری جے ہینز Henry J. Heinz نے 1876 میں ماڈرن کیچپ Ketchup کی ریسیپی بنائی تھی اور پھر دنیا بھر میں کیچپ Ketchup کی کروڑوں بوتلیں بیچیں۔

Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %

History of the hamburger | Story of Food Invention

1
Berger-history
Berger-history

History of the hamburger | Story of Food Invention

برگر کی دلچسپ کہانی

اس کی دو کہانیاں سامنے آتی ہیں ایک تو سادہ ہے کہ برگر کو ایک  امریکی آدمی فلیچر ڈیوس نے 1880میں ایجاد کیا تھا اس کا ریسٹورنٹ ہوتا تھا جہاں اس نے بیف پیٹس کو برگر میں ڈال کر بیچنا شروع کیا اور یہی سے برگر پوری دنیا میں پھیل گیا۔

لیکن برگر کی ایک دوسری کہانی بھی ہے اور وہ یہ کہ 1885 میں امریکہ میں ایک پندرہ سالہ لڑکا ایک میلے میں میٹ بالز بیچ رہا تھا اس لڑکے کا نام چارلی نگرین تھا اس کے میٹ بالز جنہیں ہم اپنی زبان میں کوفتے کہہ سکتے ہیں اتنے بک نہیں رہے تھے اس لڑکے کو سمجھ میں نہیں آرہا تھا کہ یہ ان کا کیا کرے اور اس نے غصے میں آکر ایک بریڈ کے اندر ان میٹ بالز کو ڈال کربریڈ کو دبا دیا۔

یعنی ایک برگر بنا لیا اس نے یہ برگرخود کھایا اور اسے یہ کافی پسند آیا کچھ لوگ کہتے ہیں کہ اسی پندرہ سالہ لڑکے چارلی نگرین نے دراصل برگر ایجاد کیا تھا۔

May You Also Like – Rizq Ke 16 Darwaze Aur Unki Chabi – Rizq Me Barkat Hogi

Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %

Aik Jannati Sahabi Ka Waqia | Islamic Story

0
aik-jannati-sahabi-ka-waqia.png

aik-jannati-sahabi-ka-waqia.png

Aik Jannati Sahabi Ka Waqia | Islamic Story

حضرت انس بن مالک رضی اللہ ہو تعالئ عنہ فرماتے ہیں کہ ایک مرتبہ ہم نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی خدمت میں بیٹھے تھے آپ صلی اللہ علیہ وآلہٖ وسلم نے فرمایا لوگو ابھی تمہارے پاس ایک جنتی شخص نمودار ہو گا۔

چنانچہ ایک انصاری صحابی اس حالت میں تشریف لاتے ہیں کہ وضو کا پانی ان کی داٹھی سے ٹپک رہا تھا اور انہوں نے اپنے جوتے بائیں ہاتھ میں اٹھا رکھے تھے۔

دوسرے دن بھی آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے یہی بات کی اور پھر وہی صحابی نمودار ہوئے اور آج بھی پہلے کی طرح جوتے ان کے ہاتھ میں تھے تیسرے دن بھی آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے وہی بات دوہری اوراس دن وہی صحابی اسی حالت میں نمودار ہوئے جن کی داڑھی سے وضو کا پانی ٹپک رہا تھا اور انہوں نے جوتے بائیں ہاتھ میں اٹھا رکھے تھے۔

جب نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم اٹھ کر چل دیے تو عبداللہ بن عمرو رضی اللہ ہو تعالئ عنہ ان انصاری صحابی کے پیچھے لگ گے اورعرض کیا کہ والد سے میرا کچھ اختلاف ہوگیا ہے اور تین دن تک ان سے جدا رہنے کی میں نے قسم کھا لی ہے۔

May You Also Like – Beautiful Moral Urdu Story | Adha Kambal

لہذا اگر آپ مناسب سمجھیں تواس مدت تک مجھے اپنے ساتھ رہنے کی اجازت دے دیں انصاری صحابی نے جواب دیا کوئی بات نہیں آپ جتنا چاہیں میرے گھر پر رہ سکتے ہیں عبداللہ بن عمرو رضی اللہ تعالی عنہ کا بیان ہے کہ میں نے تین راتیں ان کے ہاں گزاری  لیکن دیکھا کہ وہ رات میں کوئی عبادت نہیں کرتے کوئی تَہَجُّد نہیں پڑھتے البتہ رات میں جب بھی ان کی نید ٹوٹتی یا کروٹ بدلتے تو اللہ کا ذکر کرتے اور ان کی بڑائی بیان کرتے۔

میں نے ایک بات یہ بھی دیکھی کہ وہ زبان سے ہمیشہ اچھا ہی بولتے جب تین دن مکمل ہو گئے اور میرے دل میں کوئی بھی عمل بڑا نہ معلوم ہوا تو میں نے کہا اے اللہ کے بندے میرے اور میرے والد کے درمیان کوئی جھگڑا اور ناراضگی نہیں۔

البتہ میں نے نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے سنا کہ تین دن لگاتار آپ کے بارے میں فرما رہے تھے کہ ابھی تمہارے پاس ایک جنتی شخص نمودار ہو گا اور تینوں دن آپ ہی تشریف لائے تو میں نے ارادہ کیا کہ آپ کے پاس رہ کر میں آپ کا عمل دیکھوں کہ آپ کون سا عمل کرتے ہیں تاکہ میں بھی ویسا عمل کر سکوں لیکن میں دیکھ رہا ہوں کہ آپ زیادہ عمل نہیں کرتے پھر کیا وجہ ہے کہ آپ اس مقام تک پہنچے ہیں جس کی بنیاد پر اللہ کے رسول اللہ علیہ وسلم نے یہ بات کہی ہے۔

انہوں نے کہا ہے بس میرا عمل تو بس اتنا ہے جو تم نے دیکھا کہ جب میں وہاں سے واپسی کے لیے مڑا تو انہوں نے پیچھے سے آواز دے کر بلایا اور فرمایا عمل تو وہی ہے جو تم نے دیکھ لیا۔

البتہ ایک بات ضرور ہے کہ میرے دل میں نہ تو کسی مسلمان کے لیے دھوکے کا جذبہ ہے اور نہ ہی اللہ تعالی کی دی ہوئی بھلائی اور نعمت پر ان سے حسد کرتا ہوں یعنی نہ میں کسی کو دھوکہ دیتا ہوں اور نہ ہی کسی سے حسد کرتا ہوں۔

عبداللہ بن عمرو رضی اللہ تعالی عنہ نے کہا بس یہی چیز ہے جو آپ کو اس مقام تک لائی ہے اور یہی وہ عادت ہے جس کو اپنانے کی ہم میں طاقت نہیں۔

محترم دوستو بعض مرتبہ صرف ایک اچھی عادت انسان کو باقی لوگوں سے منفرد کرتی ہے اور اللہ کے دربار میں اس کا مقام بلند کرتی ہے ہمیں چاہیے کہ زیادہ نہیں کوئی ایک اچھی عادت ہم اپنا لے جو ہمیں باقی لوگوں سے منفرد کرے

May You Also Like – Badshah or 99 Dirham | Urdu Moral Story

Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %

Hazrat Ibrahim or Majoosi ka Waqia | Islamic Story

0
hazrat-ibrahim-story

hazrat-ibrahim-story

Hazrat Ibrahim or Majoosi ka Waqia | Islamic Story

حضرت ابراہیم علیہ السلام کی عادت مبارکہ تھی کہ رات کا کھانا کبھی اکیلے نہیں کھاتے تھے کسی نہ کسی کو ضرور مدعو فرما کر کھانا نوش فرماتے تھے۔

ایک رات حسب عادت آپ کسی مہمان کا انتظار کر رہے تھے کہ کسی نے دروازے پر دستک دے دی آپ نے دروازہ کھولا تو دیکھا وہاں ایک ۸۰ سال کا بوڑھا تھا اس نے کہا کہ مجھے کچھ کھانے کو دے دو مجھے بے حد بھوک لگی ہے۔

حضرت ابراہیم علیہ السلام نے خوش ہو کر فرمایا مرحبا مرحبا اس آدمی کے ہاتھ دولیں اس کے سامنے کھانا رکھا اور کہا بسم اللہ کیجئے وہ بوڑھا بولا میں بسم اللہ نہیں پڑھوں گا کیونکہ میں مجوسی ہوں حضرت ابراہیم علیہ السلام نے غصے میں آکر کہاں کھڑے ہو جاؤ میں مجوسی کے ساتھ کھانا پسند نہیں کرتا۔

May You Also Like – Beautiful Moral Urdu Story | Adha Kambal

وہ بوڑھا چلا گیا ادھر پلک جھپکتے ہی حضرت جبرئیل علیہ السلام آئے اور بولے اللہ نے فرمایا ہے اے  ابراہیم علیہ السلام منکر تو وہ میرا ہے میں نے تو ۸۰ سال میں کبھی بھی اس کا رزق نہیں روکا۔

۸۰ سال سے وہ میری نافرمانی کر رہا ہے مجھے نہیں مانتا مجھ پر ایمان نہیں لاتا لیکن اس کے باوجود ۸۰ سالوں میں میں نے ایک دن بھی اس کو بھوکا نہیں سولیا حضرت ابراہیم علیہ السلام یہ سنتے ہی اس مجوسی کے پیچھے دوڑے تھوڑی دور گئے تھے تو وہ مل گیا آپ علیہ السلام نے فرمایا اے اللہ کے بندے مجھے معاف کر دو اور میرے ساتھ چل کر کھانا کھا لو۔

اپ کی وجہ سے اللہ مجھ سے سخت ناراض ہوگیا ہے مجوسی بولا کہ کون اللہ اپ علیہ السلام نے فرمایا وہ ذات جس نے ساری کائنات کو پیدا کیا ہے اللہ وہ ہے جس نے ہر شے کوتخلیک کیا اور خوبصورت شکل میں ڈالا اللہ وہ ہے جو تمام مخلوقات کو رزق دیتا ہے جس نے تجھے اور مجھے اب تک زندہ رکھا ہوا ہے۔

مجوسی حضرت ابراہیم علیہ السلام کی یہ بات سن کر رونے لگا اور بولا کیا کہنے ہے تیرے رب کے اے اللہ کے بندے تیرے رب کا تو اخلاق بہت اعلی اور عظیم ہے میں اتنے  پیار کرنے والے عظیم رب پر ایمان لاتا ہوں چنانچہ اس نے کلمہ پڑھا اور اللہ پر ایمان لے آیا۔

عزیز دوستوں ہمیں نفرت گنہگار سے نہیں بلکہ اس کے گناہ سے کرنا چاہیے جو کوئی بھی انسان کسی گناہ میں مبتلا ہو ہمیں اس سے نفرت نہیں کرنی چاہیے بلکہ اس کے لیے ہدایت کی دعا کرنی چاہیے اللہ ہم سب کو سمجھنے اور نیک اعمال کرنے کی توفیق عطا فرمائے۔ آمین یا رب العالمین

May You Also Like – Ek Bagh Ki Kahani | Urdu Moral Story

Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %